انجمن آڑھتیاں متنازعہ کیوں؟

انجمن آڑھتیاں متنازعہ کیوں؟

غلہ منڈی وہاڑی 1927 میں قائم ہوئی اور قیام پاکستان کے بعد سے انجمن آڑھتیاں کا باقاعدہ ہر دو سال بعد انتخاب ہوتا ہے۔ گزشتہ دس سال سے انجمن آڑھتیاں غلہ منڈی کے دو گروپوں میں ہلکی پھلکی نوک جھونک ہوتی رہی ہے۔ جن میں ایک راؤ تسلیم خان اور دوسرا چودھری مشتاق گوجر گروپ ہے۔ انہی دوگ روپوں میں گزشتہ دس سال سے الیکشن ہوتا ہے اور دونوں میں سے ایک گروپ فتح سے ہمکنار ہوتا ہے۔ لیکن چند سال قبل یہ معاملہ شدت اختیار کر گیا تب سے اقدار کی جنگ کے لیے دونوں گروپ ایک دوسرے کے انتہائی مخالف نظر آئے۔ گزشتہ چند دن سے دونوں گروپوں […]

رمضان بازار، ریلیف دے رہا ہے یا تکلیف

رمضان بازار، ریلیف دے رہا ہے یا تکلیف

ماہ رمضان میں عوام کو ریلیف دینے کے لیے پنجاب بھر کے شہروں میں رمضان بازار لگائے گئے ہیں جن کا مقصد سستے داموں معیاری اشیائے خوردونوش کی فراہمی ہے۔ کیا پنجاب حکومت عوام کو ریلیف دینے میں کامیاب ہو پائے گی؟ اس حوالے سے نمائندہ سجاگ نے عام بازار کا رمضان بازار سے موازنہ کیا ہے۔ یوٹیلٹی سٹورز کی جانب سے لگائے جانے والے سٹال پر خاص طور پر گھی، کوکنگ آئل اور چینی کو فوکس کیا گیا ہے۔ سٹال انچارج اظہر ندیم چاولہ بتاتے ہیں کہ ان کے پاس آغاز بناسپتی اور گھی بھاری مقدار میں موجود ہے گھی عام بازار کی قیمت 120 کے مقابلے میں 116 […]

گاڑیوں کی نیلامی کروانا میرے دائرہ کار میں نہیں

گاڑیوں کی نیلامی کروانا میرے دائرہ کار میں نہیں

وہاڑی میں محکمہ صحت کو سرکاری ہسپتال میں ادویات کی ضرورت ہو، وارڈز میں ایئرکنڈیشنڈ لگوانے کی ضرورت ہو یا کوئی اور کسی قسم کی مدد کی ضرورت، شہر کی مرکزی انجمن تاجران نے ہر قسم کا تعاون کیا ہے۔ “ارشاد حسین بھٹی” ارشاد حسین بھٹی مرکزی انجمن تاجران کے صدر ہیں، وہ کہتے ہیں کہ انہیں یہ جان کر شدید مایوسی ہوئی جب انہیں علم ہوا کہ محکمہ صحت کے زیر استعمال رہنے والی کئی گاڑیاں ناکارہ کر کے کھڑی کر دی گئی ہیں۔ “اگر کسی شخص کے ذاتی استعمال میں کوئی مشینری یا گاڑی ہو اور وہ استعمال کے قابل نہ رہے تو ایسی اشیاء کو فروخت کر […]

ڈاکٹر صاحب نہیں ہیں وہاڑی جائیں

ڈاکٹر صاحب نہیں ہیں وہاڑی جائیں

ضلع وہاڑی کی تین تحصیلوں میں لگ بھگ پونے آٹھ سو گاؤں ہیں جن میں سے 133 گاؤں ایسے ہیں جن کی آبادی پانچ ہزار سے زائد ہے۔ ان افراد کو فراہم کی گئی صحت کی سہولیات کی بات کی جائے تو ضلع بھر میں 115 بنیادی مراکزِ صحت اور ڈسپنسریاں چودہ دیہی مراکزِ صحت اور چار بڑے ہسپتال شامل ہیں۔ آبادی کے حساب سے دیکھا جائے تو یہ سہولیات یہاں بسنے والے افراد کے لیے ناکافی ہیں۔ جہاں یہ سہولیات ناکافی ہیں وہیں پر یہ بھی دیکھنا ہو گا کہ آیا ان ہسپتالوں میں ڈاکٹرز، ادویات اور دیگر عملہ بھی موجود ہے یا نہیں۔ ایسا ہی ایک دیہی مرکزِ […]